Home / News / اپوزیشن کے درمیان استعفوں کے معاملے پر گرماگرمی

اپوزیشن کے درمیان استعفوں کے معاملے پر گرماگرمی

 اپوزیشن جماعتوں کی آل پارٹیز کانفرنس میں اسمبلیوں سے استعفوں کے معاملے اپوزیشن جماعتوں میں خاصی گرماگرمی دیکھنے میں آئی۔

ایک موقع پر بلاول نے نواز شریف کو اسمبلیوں اور سندھ حکومت سے استعفوں کی پیش کش کی اور کہا کہ نواز شریف وطن واپس آکر یہ استعفے اسپیکر کو پیش کردیں۔

جس پر نواز شریف نے کہا کہ وہ اپنی پارٹی کے استعفے بلاول کو دے دیتے ہیں۔ بلاول اپنے استعفے انہیں اور وہ اپنے استعفے بلاول کو دیتے ہیں، پھر دونوں کے استعفے مولانا فضل الرحمٰن کے حوالے کر دیں۔

نواز شریف نے موقف اپنایا کہ وہ استعفوں کے مخالف نہیں مگر حکومت کے خلاف دباؤ بناکر استعفے دیے جائیں۔

دوسری جانب مولانا فضل الرحمان اپنے خطاب میں پیپلزپارٹی سے سندھ اسمبلی تحلیل اور استعفے دینے کا کہتے رہے۔ مولانا فضل الرحمان کا مطالبہ تھا کہ اسمبلیوں سے استعفے دئیے جائیں، یہ جعلی نظام ہے۔ آئندہ کسی کے اعتماد کو ٹھیس نہ پہنچے اسکی کیا گارنٹی ہے۔

ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمٰن استعفوں کے بارے میں پارٹی رہنماؤں سے بحث کرتے رہے اور انہوں نے آخری وقت میں اعلامیہ بھی تبدیل کروایا۔

واضح رہے کہ اے پی سی میں شامل جماعتوں نے وزیراعظم سے فوری مستعفی ہونے کا مطالبہ کرتے ہوئے حکومت کے خلاف ملک گیر احتجاجی تحریک چلانے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

Share
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Check Also

زمین پر قبضے کے خلاف سمون برادری کا عمر کوٹ پریس کلب کے سامنے احتجاج

ضلع سانگھڑکے علاقے اچھڑوتھرکے رہائشی محمد رمضان سموں، لکمیر سمون وغیرہ نے گاؤں کے معزز …